contact us

Use the form on the right to contact us.

You can edit the text in this area, and change where the contact form on the right submits to, by entering edit mode using the modes on the bottom right.

3- B Main Market Gulberg II
Lahore
Pakistan

+92 - 42 - 35758395

The Old Woman and the Eagle Urdu-Sindhi

Old-Woman-URDU-SINDHI-cover.jpg

بوڑھی عورت اور عقاب


اردو-سندھی‬ ایڈیشن

تحریر: ادریس شاہ
تصوىرىں: نتاشا ڈیلمار
ترجمہ: حفیظ دیوان
عمر: ۳۔۱۱

Rs. 200 ‎‎(پیپربیک) ISBN: 978-1-942698-61-6
۳۲ صفحے

اس دلچسپ کہانی میں ایک بوڑھی عورت کا پہلی بار ایک عقاب سے سامنا ہوتا ہے۔ وہ اس کے نامانوس روپ سے حیران ہو کر ارادہ کرلیتی ہے کہ اسے ایک ایسی شکل میں تبدیل کردے جو کہ اس کے خیالات سے موافق ہو کہ پرندوں کو کیسا دکھائی دینا چاہیے۔ اس کی حرکات انسانی سوچ کے ایک عام پہلو کی عکاسی کرتے ہیں جس میں ہم نامانوس کو تبدیل کرکے اسے قابل قبول بنا دیتے ہیں۔

اس قصے کا بیان۷۰۰ سال سے زیادہ پہلے رہنے والے مقبول صوفی شاعر جلال الدین رومی کی لکھی ہوئی مثنوی میں بھی پایا جاتا ہے۔ یہاں دیا ہوا بیان خاص طور پر بچوں کے لیے پیش کیا ہے مصنف ادریس شاہ نے، جنہوں نے تیس سال سے زیادہ تک ان روایتی کہانیوں کو تمام وسطی ایشیا اور مشرق وسطیٰ میں زبانی کہے گئے اور لکھے ہوئے ذرائع سے جمع کیا تھا۔
’افغانستان سے آئی ہوئی۔۔۔یہ کلاسیکی کہانی، شائستہ انداز میں پیش کی گئی، ہر مجموعے کو سنوارے گی۔‘ کرکس ریویوز

’نئے نظاروں اور نئی چیزوں کو قبول کرنا سیکھنے کے بارے میں اس عمدہ کہانی کو نٹاشا ڈیلمار کی نظر فریب رنگین تصاویر ایک نمایاں خصوصیت دیتی ہیں۔‘ مڈویسٹ بک ریویو


پوڙهي عورت ۽ باز


اردو-سنڌي اشاعت

ليکڪ: اِدرِيس شاه
تصويرون: نتاشا ديلمار
ترجمو: اظهر حسين ابڙو
عمر: ۳-۱۱

Rs. 200 ‎‎ ISBN: 978-1-942698-61-6

هن دِلچَسپ ڪَهاڻِي ۾، هِڪ پوڙهي عورت پَهريون دَفعو باز ڏِسي ٿي. ان جي شڪل ۽ صورت کان ناوَاقف هُجڻ جي ڪَري هوءَ مُنجهي پَئي ٿي، تنهنڪري هن پنهنجن خيالن مطابق ان کي تبديل ڪرڻ جو فيصلو ڪَري ٿي ته هو سڀ کان وڌيڪ ڪهڙي پکي جهڙو لڳي ٿو. هن جون سوچون عام انسان جي سوچ جي عڪاسي ڪن ٿيون: يعني ناآشنائي کي تبديل ڪَري قابلِ قبول بنائڻ.

هن ڪهاڻي جو هڪ ورجن مشهور شاعر جلال الدين رومي جي مثنوي ۾ ملي سگھي ٿو، جيڪو 700 سال اڳ وفات ڪري ويو. هي ورجن خاص طور تي ليکڪ ادريس شاه کان ٻارن لاءِ پيش ڪيو ويو آهي، جنهن، 30 سالن کان مٿي عرصي ۾، وچ اوڀر ۽ وچ ايشيا مان زباني ۽ لکتي روايتي ڪهاڻين کي گڏ ڪيو آهي.